حضرت والا دامت برکاتہم کا سفر حرمین شریفین

حضرت والا دامت برکاتہم کا سفر حرمین شریفین

۳محرم الحرام ۱۴۳۷ھ (۱۷ اکتوبر ۲۰۱۵ء) بروزِ ہفتہ صبح کے وقت خانقاہ امدادیہ اشرفیہ گلشن اقبال اور جامعہ اشرف المدارس کے رئیس حضرت والا مولانا شاہ حکیم محمد مظہر صاحب دامت برکاتہم عمرہ کی نیت سے حرمین کے لیے سعودی ایئر لائن کی پرواز سے تقریباً دس بجے روانہ ہوئے، روانگی سے قبل کراچی ایئر پورٹ پر بورڈنگ لاؤنج میں جناب مولانا عبد الحفیظ صاحب مکی دامت برکاتہم سے ملاقات ہوئی۔ اس اچانک ملاقات سے دونوں بزرگ بے حد مسرور ہوئے۔ مولانا عبد الحفیظ صاحب تو مکہ مکرمہ میں ہی مقیم ہیں لیکن آنکھ کے علاج کے لیے کراچی تشریف لائے ہوئے تھے۔

جدہ ایئر پورٹ پر جہاز اپنے مقررہ وقت پر پہنچ گیا۔ ایئر پورٹ سے باہر حضرت کے عشاق کی ایک بڑی کثیر تعداد استقبال کے لیے موجود تھی۔  تقریباً پندرہ روزہ قیام کے بعد ۱۷ محرم الحرام (۳۱ اکتوبر) کو مدینہ منورہ کے ایئر پورٹ سے کراچی کے لیے واپسی ہوئی۔ مولائے کریم حضرت والا دامت برکاتہم کے اس سفر کو قبول فرمائے، آمین۔

مہمانوں کی آمد

جناب الحاج منصور صاحب (جدہ والے) خلیفہ حضرت مولانا شاہ ابرار الحق صاحب ہردوئی رحمۃ اللہ علیہ ۲۳نومبر کی صبح کی مجلس میں تشریف لائے۔ اسی طرح جناب الحاج عبد الصمد چوہان صاحب (تبلیغی جماعت افریقہ کے بزرگ) ہفتہ کی رات خانقاہ تشریف لائے۔

ساؤتھ افریقہ سے حضرت مولانا شبیر احمد سالوجی صاحب، ان کے بیٹے جناب محمد سالوجی صاحب اور مولانا یوسف تتلا صاحب حضرت کی زیارت و ملاقات کے لیے خانقاہ تشریف لائے۔

بروزِ پیر۳۰ نومبرحضرت الحاج جناب مولانا پیر ذوالفقار احمد صاحب نقشبندی دامت برکاتہم حضرت والا دامت برکاتہم کی دعوت پر بوقت مغرب حضرت والا دامت برکاتہم سےملاقات کے لیے خانقاہ تشریف لائے حضرت نے استقبال فرمایا اور ان کی خاطر تواضع کا اہتمام فرمایا، پیر صاحب نے بھی حضرت کے ماتھے پر بوسہ دیا یوں محبت کا اظہار فرمایا، اس کے بعد مسجد اشرف میں جہاں عوام کا ایک جم غفیر اکٹھا ہوگیا تھا پیر صاحب کا عشق الٰہی کے عنوان پر تفصیلی بیان ہوا۔ مولائے کریم ان کی آمد کو قبول فرمائےاور ہمیں اپنے عاشقوں میں شامل فرمائیں،آمین۔

حضرت مولانا عبد الواحد صاحب رحمۃ اللہ علیہ کی تعزیت

چوں کہ حضرت والا دامت برکاتہم عمرہ کے سفر پر تھے، اس لیے سفر سے واپسی پر فوراً حضرت مولانا عبد الواحد صاحب رحمۃ اللہ علیہ کی تعزیت کے لیے جامعہ حمادیہ تشریف لے گئے اور صاحب زادگان سے تعزیت فرمائی۔ مولائے کریم مولانا عبد الواحد صاحب رحمۃ اللہ علیہ  کے درجات بلند فرمائے۔

اِنتقالِ پُرملال

مرحوم محمد انور قریشی صاحب ۹ صفر ۱۴۳۷ھ مطابق ۲۲نومبر ۲۰۱۵ء کو بروز اتوار دوپہر تین بج کر دس منٹ پر اپنے خالق حقیقی سے جاملے۔

مرحوم قریشی صاحب ۲۰؍ نومبر ۱۹۴۱ء کو شملہ (انڈیا) میں پیدا ہوئے۔ آپ کے والد محترم کا نام محمد ایوب تھا۔ ۱۹۹۱ء میں­ محی السنہ حضرت مولانا شاہ ابرار الحق صاحب ہردوئی رحمۃ اللہ علیہ اور مجددِ زمانہ حضرت مولانا شاہ حکیم محمد اختر صاحب رحمۃ اللہ علیہ کے ساتھ فریضہ حج کی ادائیگی کی۔ آپ کو حضرت والا رحمۃ اللہ علیہ سے والہانہ محبت اور بیعت کا تعلق تھا آپ کی رہائش خانقاہ کے قریب ہی تھی۔

آپ کے پسماندگان میں دو بھتیجے اور تین بھتیجیاں شامل ہیں۔ اللہ تعالیٰ مغفرت بے حساب فرمائیں،آمین۔


جامعہ  اشرف المدارس کراچی کی شاخ مدرسہ قاسم العلوم جمعہ گوٹھ کورنگی نمبر ۶ کے ناظم مفتی عبد المستعان کے والدِ محترم جناب محمد اسلم صاحب جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب یکم صفر 1437 ھ مطابق ۱۴ نومبر 2015 ء کو اکیاسی سال کی عمر میں طویل علالت کے بعد انتقال فرماگئے۔ انا للہ وانا الیہ راجعون ، اللھم اغفرھم وارحمھم وادخلھم فی جنۃ نعیم۔

اللہ تعالیٰ مرحوم کی کامل مغفرت فرمائیں ، درجاتِ عالیہ سے نوازیں اور ان کے تمام متعلقین اور اہل خانہ کو صبرِ جمیل اور فلاح دارین عطا فرمائیں ، آمین اور قارئین سے بھی مرحوم کے لیے دعائے مغفرت کی درخواست ہے۔

متعلقہ مراسلہ

Last Updated On Monday 24th of June 2019 11:55:31 AM