چین سے آئے ہوئے تبلیغی جماعت کے احباب کی خانقاہ آمد

چین سے آئے ہوئے تبلیغی جماعت کے احباب کی خانقاہ آمد

چائنا کی تبلیغی جماعت کے احباب (جس میں دو علماء کرام مولانا مسعود اور مولانا صالح بھی تھے) پاکستان میں وقت لگانے آئے تو گزشتہ دنوں خانقاہ میں تشریف لائے اور حضرت والا دامت برکاتہم کی زیارت کی۔ حضرت والا مدظلہم نے بے حد محبت کا اظہار فرمایا اور دعاؤں سے نوازا۔

مڈغاسکر جانے والی جماعت کی آمد

کراچی سے تعلق رکھنے والے احباب جن کی تشکیل تبلیغی ترتیب پر مڈغاسکر ہوئی تھی۔ حضرت والا مولانا شاہ حکیم محمد مظہر صاحب دامت برکاتہم کے پاس زیارت و دعا کے لیے خانقاہ حاضر ہوئے۔ مولائے کریم ان تبلیغی جماعتوں کی چلت پھرت کو قبول فرمائے۔

مصر، سوڈان اور برونائی کے علماء کی آمد

رواں ماہ مصر، سوڈان اور برونائی کے علماء خانقاہ حاضر ہوئے اور حضرت والا دامت برکاتہم سے اجازتِ حدیث لی، اس کے علاوہ ایک دوسری  مجلس جس میں ۱۰۰؍ کے قریب علماء  تھے حضرت والا دامت برکاتہم کی  سند حدیث سے مشرف ہوئے۔

حضرت والا دامت برکاتہم کی حضرت مفتی رضاء الحق صاحب سے ملاقات

۱۴ ربیع الاوّل ۱۴۳۷ھ (۲۶ دسمبر ۲۰۱۵) بروز ہفتہ صبح نو بجے حضرت والا دامت برکاتہم کو اطلاع ملی کہ دار العلوم زکریا جنوبی افریقہ کے شیخ الحدیث حضرت مولانا مفتی رضاء الحق صاحب دامت برکاتہم جامعہ احسن العلوم گلشن اقبال میں مختصر ملاقات کے لیے تشریف لائے ہیں، حضرت والا دامت برکاتہم فوراً اپنے کثیر احباب کے ساتھ مفتی صاحب مدظلہم سے ملاقات کے لیے تشریف لے گئے۔ وہاں جناب مولانا محمد زرولی خان صاحب  اور مفتی رضاء الحق صاحب حضرت والا کی اچانک آمد سے بے حد مسرور ہوئے۔ تینوں بزرگوں کی کچھ دیر نشست رہی۔ پھر مفتی رضاء الحق صاحب کو اسلام آباد جانے کے لیے ایئر پورٹ جانا تھا، چناں چہ حضرت والا نے ان کو رخصت فرمایا۔

مولانا  زرولی خان صاحب حضرت  سے مخاطب ہوئے کہ آپ کی چستی تو مشہور ہے اور ہمارے در پر جب بھی کوئی مشکل وقت آیا آپ نے حقِ جوار ادا کردیا، میں اور میرا ادارہ آپ کا مشکور ہے۔

دعائے مغفرت

حضرت والا دامت برکاتہم کے خلیفہ جناب صادق سایہ صاحب کو صدمہ

حلیم الامت حضرت والا مولانا شاہ حکیم محمد مظہر صاحب دامت برکاتہم کے خلیفہ مجاز جناب صوفی صادق سایہ صاحب کے والد مکرم جناب فضل عمر صاحب ۱۹ دسمبر کی شب بروز ہفتہ دل کے عارضے میں مبتلا رہ کر ۸۵ سال کی عمر میں دار فانی سے رحلت فرماگئے۔ اللہ تعالیٰ مرحوم کی بے حساب مغفرت فرمائیں اور پسماندگان کو صبر جمیل اور اس پر اجر جزیل عطا فرمائیں۔

جناب ولی محمد صاحب رحمۃ اللہ علیہ کا سفر آخرت

محی السنۃ حضرت مولانا شاہ ابرار الحق صاحب ہردوئی رحمۃ اللہ علیہ کے شاگرد و خادم جناب ولی محمد صاحب بھی گزشتہ دنوں سفر آخرت پر روانہ ہوئے۔ جناب ولی محمد صاحب رحمۃ اللہ علیہ حضرت ہردوئی رحمۃ اللہ علیہ کے خاص شاگرد و خادم تھے، انہوں نے حضرت ہردوئی رحمۃ اللہ علیہ  سے ہی قرآنِ پاک پڑھا۔ پاکستان آنے کے بعد حضرت ہردوئی رحمۃ اللہ علیہ کے سفر و حضر میں خدمت میں رہتے تھے اور ہمارے حضرت والا مولانا شاہ حکیم محمد اختر صاحب رحمۃ اللہ علیہ سے خاص تعلق و محبت رکھتے تھے اور حضرت رحمۃ اللہ علیہ  ہی کی برکت سے پاکستان آئے تھے۔ حضرت ہردوئی رحمۃ اللہ علیہ کی وفات کے بعد حضرت والا رحمۃ اللہ علیہ سے اور اس کے بعد حلیم الامت حضرت اقدس مولانا شاہ حکیم محمد مظہر صاحب دامت برکاتہم سے بیعت کا تعلق تھا۔  بہت ہی لطیف اور خوش مزاج آدمی تھے۔ حضرت ہردوئی رحمۃ اللہ علیہ اور حضرت والا رحمۃ اللہ علیہ کو جب بھی دیکھتے تو حضرت خواجہ عزیز الحسن صاحب مجذوب رحمۃ اللہ علیہ کا یہ شعر پڑھتے؎

چمکتا ہے  چہرہ  دمکتی  ہے آنکھیں

بڑھاپے میں جانِ جاں ہورہا ہے

انتقال کی خبر ملنے کے بعد حضرت والا دامت برکاتہم ان کے جنازہ میں شرکت کے ارادہ سے تشریف لے گئے،اگرچہ وہاں اور بھی علماء تھے لیکن حضرت ہردوئی رحمۃ اللہ علیہ کی نسبت سے ان کے لواحقین نے حضرت والا دامت برکاتہم سے ہی جنازہ پڑھوایا۔ مولائے کریم کامل مغفرت فرماکر درجات بلند فرمائے۔

 حضرت والا دامت برکاتہم کے مرید مولانا عبد القادر صاحب رحمۃ اللہ علیہ  کی رحلت

معمر اور بزرگ عالم دین اور مولانا سعید احمد جلال پوری شہید رحمۃ اللہ علیہ  کے بھائی جناب مولانا عبد القادر صاحب جن کا بیعت کا تعلق ہمارے حضرت والا دامت برکاتہم سے تھا، گردوں کی خرابی کے باعث گزشتہ دنوں انتقال کرگئے۔ اِنَّا لِلہِ وَ  اِنَّاۤ اِلَیۡہِ رٰجِعُوۡنَ ۔ادارہ تمام مرحومین کی وفات پر ان کے لواحقین کے غم میں برابر کا شریک اور قارئین سے دعاؤں کا خواست گار ہے۔

حکیم شہاب الدین صاحب کی اہلیہ محترمہ کی رحلت

حکیم شہاب الدین کی اہلیہ­اورمحمدعمران عارفی کی والدۂمحترمہ­بروز جمعہ­۱۸ستمبر 2015ء صبح ساڑھے گیارہ بجے اپنے خالقِ حقیقی سے جاملیں۔ اِنَّا لِلہِ وَ  اِنَّاۤ اِلَیۡہِ رٰجِعُوۡنَ مرحومہ کی نمازِ جنازہ حلیم الامت حضرت اقدس مولانا شاہ حکیم محمد مظہر صاحب دامت برکاتہم کی امامت میں رات دس بجے ادا کی گئی۔

بعد ازاں حکیم شہاب الدین صاحب سے مولانا محمد اسماعیل صاحب حفظہ اللہ مع اہل خانہ کے تعزیت کے لیے تشریف لائےاور تعزیتی کلمات سے نوازا۔اللہ رب العزت بشمولِ­مرحومہ امتِ مسلمہ کی کامل مغفرت فرمائے اور جوارِ رحمت میں جگہ عطا فرمائے،آمین۔

متعلقہ مراسلہ

Last Updated On Tuesday 20th of August 2019 03:07:22 AM